• Home »
  • Uncategorized »
  • بہہ گئے منگل کے روز سہ پہر لواری ٹنل کے احاطے میں اچانک تیز بارش ہوئی۔ جس کے نتیجے میں دو غواگئے (موٹر کار) اور پولٹری کے دو ڈاٹسن سیلاب میں

بہہ گئے منگل کے روز سہ پہر لواری ٹنل کے احاطے میں اچانک تیز بارش ہوئی۔ جس کے نتیجے میں دو غواگئے (موٹر کار) اور پولٹری کے دو ڈاٹسن سیلاب میں

منگل کے روز سہ پہر لواری ٹنل کے احاطے میں اچانک تیز بارش ہوئی۔ جس کے نتیجے میں دو غواگئے (موٹر کار) اور پولٹری کے دو ڈاٹسن سیلاب میں بہہ گئے

چترال (نمایندہ شندور ٹائمز) ۔ تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ سیلاب سے چترال پشاور روڈ مکمل طور پر بند ہو گیا ہے۔ اورزیارت کے مقام پر ٹنل کے احاطے میں تقریبا ادھا کلومیٹر سڑک کا ایریا ملبے سے بھر گیا ہے۔ اور کئی مقامات پر کٹاؤ کا شکار ہوا ہے۔ جس کی وجہ سے چترال پشاور روڈ زیارت کے مقام پر مکمل طور پر ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بند ہے۔ روڈ بند ہونے کی وجہ سے پشاور سے آنے اور چترال سے دیر اور پشاور جانے والے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ اور درجنوں ٹرک اور مسافر گاڑیاں پھنس کر رہ گئی ہیں۔ مسافر گاڑیوں میں دوسرے صوبوں میں روزگار کیلئے رہائش پذیر چترال کے مرد و خواتین و بچوں کے قافلے شا مل ہیں۔ عشریت پولیس کے مطابق لواری ٹنل چترال سائڈ کے اوپر سہ پہر ساڑھے تین بجے اچانک گرج چمک کے ساتھ تیز بارش ہوئی۔ اور چند منٹوں کے اندر طوفانی سیلاب آیا۔ جس نے لواری ٹنل کے قریب روڈ کا حلیہ بگاڑ کے رکھ دیا۔ روڈ سائڈ پر دیر جانے کیلئے دو پولٹری کے ڈاٹسن اور دو موٹر کار کھڑے تھے۔ جنہیں بہا کر لے گیا۔ تاہم ڈرائیور اپنی جان بچانے میں کامیاب ہو گئے۔ درین اثنا چترال سے 160 کلومیٹر دوربریپ استچ کے مقام پر چترال سکاؤٹس کے جوان لا نس نائیک محبوب عالم ولد شاہ عالم سکنہ میراگرام نمبر1 گلگت سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان کی نعش دریا ء سے نکالتے ہوئے خود بھی دریا کے موجوں کا شکار ہوا ۔ محبوب عالم کی نعش بعد آزان بریپ میں دریاء کے کنارے سے نکال لی گئی ہے۔ اور اُسے پوسٹ مارٹم کرنے کے بعدآبائی گاؤں میراگرام نمبر 1روانہ کر دیا گیا ہے۔ یاسین گلگت سے تعلق رکھنے والا نوجوان اپنی بہن کے ساتھ یارخون بانگ میں اپنی پھوپھی کے ہاں آیا ہوا تھا۔ جہاں وہ دریاء میں نہاتے ہوئے ڈوب کر لاپتہ ہو گیا۔ تاہم استچ کے مقام پر دریاء کے وسط میں ایک نعش دیکھا گیا۔جسے گلگت کے نوجوان کی لاش قرار دی جارہی ہے۔ اور اُس نعش کو نکالنے کی کو شش کرتے ہوئے چترال سکاؤٹس کا نوجوان اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔ چترال میں منگل کے روز موسم ابر آلود رہا۔ اور بادل دیکھ کر لوگ خوفزدہ ہو گئے ہیں۔ جبکہ شہری علاقوں میں موسم میں خوشگوار تبدیلی آتی ہے۔ تاہم چترال میں بادل دیکھتے ہی لوگ طوفانی بارش اور سیلاب کا خوف محسوس کرتے ہیں۔ کیونکہ این ڈی ایم اے کی طرف سے جاری کردہ ہدایت نامہ میں بادلوں کے دوران الرٹ رہنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔